|Gilgit Urdu News|myGilgit.com|

نومبر 8, 2008

ماروی میمن نے مڈل سکول الڈینگ گمبہ گرونگ کاافتتاح کیا، پروقارتقریب

درجہ بند بتحت: Gilgit News,Gilgit Urdu News — mygilgit @ 9:53 am
Tags: , ,

سکرد (کے ٹواخبار) ماروی میمن نے وزیر ولایت علی ایڈووکیٹ کی دعوت پر مڈل سکول الڈینگ گمبہ گرونگ کا باقاعدہ افتتاح کیا۔ اس تقریب میں ماروی میمن مہمان خصوصی تھیںجبکہ ان کے ساتھ اس افتتاحی تقریب میں قانون ساز اسمبلی کے رکن مظفر رےلے مسلم لیگ(ق)کے صدر عبدالواحد ،وزیر ولایت علی ایڈوکیٹ،مشیر

Marvi Memon
Marvi Memon

تعمیرات عامہ ابراہےم ثنائی،ڈائریکٹر ایجوکیشن کے علاوہ سرکاردگان اولڈنگ اور نوجوانان الڈینگ کی کثیر تعداد نے اس افتتاحی تقریب میں شرکت کی۔ماروی میمن نے فےتہ کاٹ کر سکول کا باقاعدہ افتتاح کیا گیا۔ اس کے بعد سکول کی ایک بچی نے انہیں گلدستہ پیش کیا گیا اس کے بعد تقریب کا آغاز ہوا۔ تقریب کے آغاز تلاوت کلام پاک سے ہوا اس کے بعد نعت رسول مقبول پیش کیاگیا۔اس تقریب کے سٹیج سیکریٹری سکول کے ممبرز نے کی۔ خطبہ استقبالےہ پیش کرتے ہوئے رےنجر وزیر احمد چےئرمین کمیونٹی سکول اولڈنگ گمبہ گرونگ نے کہا کہ ےہ سب سے پہلے مسلم لیگ(ق) کے لیڈوروں اور خصوصاً ماروی میمن کا شکرےہ ادا کرتے ہےں کہ انہوں نے اپنی قیمتی وقت نکال ر اس تقریب میں شرکت کی۔ انہوں نے خطبہ استقبالےہ پیش کرتے ہوئے کہا کہ پورے شمالی علاقہ جات سمیت بلتستان سکردو تعلےم کے شعبوں میں انتہائی پےچھے ہے اس وقت پورے علاقے اولڈنگ میںا بھی تک کوئی گرلز مڈل سکول موجود نہیں تھی ۔ علاقہ کی کونسلر کے مہربانی سے اولڈنگ ایریا میں لوگوں کے ڈےمانڈ پر مڈل گرلز سکول تعمیر کی گئی لےکن اس سکول میں طالب علموں کی تعداد میں روز بہ روز اضافہ ہو تا جارہا ہے۔ جس کی وجہ سے بچوں کو پڑھانے کےلئے اساتذہ کی شدید کمی ہے۔ اور ساتھ ہی اس سکول میں بھی تک کسی ٹیچرز کو ریگولر طور پر محکمہ تعلےم نے بھرتی نہیں کیا گیا ہے۔ جو کہ سراسر زیادتی ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ اس مہنگائی کے دور میں ےہاں کے ٹیچر1200روپے میں ڈیوٹی دے رہا ہے۔ مڈل گرلز سکول اولڈینگ میں طالب علموں اور طالبات کی تعداد میں خاطرخواہ اضافہ ہونے کی وجہ سے سکول کے کمیونٹی سکولوں کے والدین نے لےکر اپنی مدد آپ کے تحت فیس جمع کر کے اےک اضافی لیڈی ٹیچر ز لائی گئی اور وہ بھی اس سکول میں بچوں کو تعلےم دے رہی ہے۔ ےہاں اےک چوکیدار 98ءسے کام کر رہی ہے اس چوکیدار کو بھی ریگولر نہیں کیا گیا۔ اس سکول میں بچوں کی تعداد بہت زیادہ ہے ٹیچرز نہ ہونے کی وجہ سے مزید داخلہ نہیں یدا جارہا ہے ابھی شمالی علاقوں میں سردیاں شروع ہو چکا ہے لےکن سکول کے لئے ہیٹنگ کاکوئی بندوبست نہیں ہے۔ اس کے بعد علاقے کے عوامی نمائندے وزیر ولایت علی ایڈوکیٹ نے کہا کہ میں سب سے پہلے میمن ماروی اور مسلم لیگ(ق) کے تمام عہدیداران کا انتہائی مشکور ہیوں کہ انہوں نے اپنی قیمتی وقت میں سے وقت نکال کا رآج سکول کے افتتاحی تقریب میں شرکت کی۔ اس کے بعد انہوں نے سکول کے مسائل کے بارے میں آگاہ کیا آخر میں مہمان خصوصی ماروی میمن نے کہا کہ ہمارے کوشش ہے کہ شمالی علاقوں کی تعمیر و ترقی میں زےادہ سے زیادہ کردار ادا کر سکوں۔ اور ےہاں کے علاقائی مسائل اور قومی مسائل کو قومی اسمبلی کے ایوانوں میں پہنچانے کی کوشش کر رہا ہوں اس وقت شمالی علاقہ جات کے آئےنی حقوق کا مسئلہ بھی ہم نے قومی اسمبلی میںپہنچانے کی کوشش کی گئی ہے انہوں نے مزید کہا کہ شمالی علاقوں کی تعمیر وترقی کے لئے مسلم لیگ کے ایڈمز اور مشیروں کی زمہ داوری ہے کہ و شمالی علاقہ جات کی تعمیر و ترقی میں زیادہ سے زیادہ کام کریں انہوں نے مزید کہا کہ ہم سب کو ےکجہتی کے ساتھ اپنی حقوق کے لئے آواز بلند کرنا ہے۔ انہوں نے سکول کے طالب علموں کو ہدایت کی کہ وہ اپنی زیادہ تر توجہ تعلےم پر دے۔ تعلیم ہے تو سب کچھ ہے۔ اگر تعلےم نہیں ہے تو کچھ نہیں۔اس کے بعد ےہ پروقار تقریب اختتام پزیر ہوا اور سب ڈی ایچ کیو ہسپتال سکردو روانہ ہو گئے۔ماروی میمن نے دورہ سکردو کے موقع پر ڈی ایچ کیو ہسپتال سکردو کا بھی دورہ کیا انہوں نے مختلف وارڈز کا بھی دورہ کیا گیا۔ انہوں ے مریضوں سے ہسپتال کے مسائل کے بارے میں بھی دریافت کی گئی اس کے بعد انہون نے ڈی ایچ کیو ہسپتال سکردو کے ٹی روم اور کانفرنس روم میں تمام ڈاکٹروں سے بھی ملاقات کی انہوں نے ڈاکٹروں اور ہسپتال کے سٹاف سے بھی ہسپتال کے مسال کے بارے میں آگاہ کیا گیا۔ اس موقع پر ڈائرےکٹر صحت بلتستان رےجن ڈاکٹر حسن خان اماچہ نے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال سکردو کے مسائل کے بارے میں تفصیلی بریفنگ دی اس میں ہسپتال کیءسالانہ بجٹ میں کمی ہلسن الاﺅنس کا نہ ملنا اور ساھ ہی ساتھ GOAالاﺅنس جو کہ 450روپے ملتا تھا۔ اب اس کو بند کر دیا گیا ہے انہوں نے مزید بریفنگ دےتے ہوئے کہا کہ اس وقت سکردو میں لکڑی نو روپے چودہ روپے کے حساب سے فروخت کی جارہی ہے۔اس وقت ہسپتال کی ہیٹنگ فنڈ میں فی روم صرف دو کے جی لکری خرید سکتا ہوں۔اس وقت سکردو میں سردی بہت ہوتی ہے۔مریضوں کو سردیوں میں ہیٹنگ کا بدوبست نہیں جس کی وجہ سے لوگوں کو کافی مشکلات کا سامنا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس وقت ہلیں الاﺅنس بلوچستان میں ہے کیونکہ وہاں چھوٹے چھوٹے پہاڑ ہے۔ لےکن شمالی علاقوں کے ملازمین کو پلس الاﺅنس نہیں مل رہا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ ہم پاکستان سے بے حد محبت کرتے ہیں۔ ہر پاکستانی ہے۔ لےکن ہم مراعات اور سہولیات سے محروم ہے۔ ہمارے سنیارٹی لسٹ میں ہیرا پھیری کر رہا ہے۔ جونئےر کو ترقی دے کر سےنئر آفیسروں کی حوصلہ شکنی کی جارہی ہے۔ اس کو فوری ختم کرنے کی ضرورت ہے۔ڈاکٹروں سے خطاب کرتے ہوئے ماروی میمن کو مسائل کے بارے میں آگاہ کرتے ہوئے وزیر ولایت علی ایڈوکیٹ نے کہا کہ ڈی ایچ کیو ہسپتال سکردو میں کافی مسائل ہے غلام نبی ایڈوکیٹ اور فوزےہ سلیم عباس نے اس ہسپتال کے مسائل کو کم کرنے کےلئے فنڈز رکھا گیا اس وقت ڈی ایچ کیو ہسپتال سکردو میں موجود 180پوسٹ ابھی تک التوا کا شکار ہے ضلع سکردو اور گانچھے کے دونوں ضلاع کے مریضوں کے بوجھ ڈی ایچ کیو ہسپتال سکردو میں ہے ےہاں کے چھوٹے سٹاف چوبیس گھنٹے ڈیوتی دےتے ہیں لےکن ےہ سٹاف تمام سہولیات اور مراعات سے محروم ہے ادویات کی چیکنگ وغیرہ گلگت سے ہو رہی ہے اور ہر وقت ادویات نہیں ملتا اس لئے بلتستان رےجن کے ادویات گلگت کے بجائے سکردو سے ری چیکنگ کرنے کا احکامات جاری کریں۔انہوں نے مزید کہا کہ ڈی ایچ کیو ہسپتال سکردو کے اپ گریڈیشن کا کام جاری ہے انہوں نے مزید کہا کہ ڈاکٹروں کی پک اینڈ ڈراپ کا مسئلہ ہہے ےہاں کام کرنے والے لےڈی ڈاکٹروں کو کوئی خاص مراعات اور سہولیات میسر نہیں ہے ےہاں کے ڈاکٹر جس گریڈ میں بھرتی ہوتا ہے اسی گریڈ میں ریٹائرڈ ہوتے ہیں۔ڈاکٹر مظفر حسین انجم صد ربی ایم ایل سکردو نے کہا کہ ڈی ایچ کیو ہسپتال سکردو پچاس بڈ پر مشتمل ہے۔ لےکن ےہاں کے ڈاکٹر او ر سٹاف اےک سو پچاس مریضو ں کو علاج و معالجہ کر رہا ہے۔دیگر پاکستان کے تمام ہسپتالون میں کام کرنے والے ڈاکٹروں اور لیڈی ڈاکٹرز اور پیرامیڈیکل سٹاف کو اےمرجنسی الاﺅنس دیا جارہا جبکہ شمالی علاقوں میں کام کرنے والے ڈاکٹر ان تمام مرعات اور سہولیات سے محروم ہے۔ ےہاں کے لوکل آفیسروں کو ان پوسٹوں میں بھرتی کرنے کی ضرورت ہے۔

Daily K2 Urdu News Gilgit

The Rubric Theme. Blog at WordPress.com.

Follow

Get every new post delivered to your Inbox.