|Gilgit Urdu News|myGilgit.com|

جنوری 17, 2009

پانچ افراد کے قاتلوںاورسیکرٹری ہیلتھ پرحملہ کرنے والے دہشت گردوں کو عبرتناک سزادی جائے ، قانون سازاسمبلی

Filed under: Gilgit News,Gilgit Urdu News — mygilgit @ 1:00 شام

گلگت (کے ٹو) گلگت بلتستان قانون ساز اسمبلی نے متفقہ طورپر ایک قرار داد منظورکی ہے جس میں حکومت سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ ڈائریکٹر زراعت سمیت 5افراد کے قتل اور سیکرٹری ہیلتھ پر قاتلانہ حملہ میں ملوث دہشت گردوں کو عبرت ناک سزا دی جائے جمعہ کے روز قانون سازاسمبلی کے25ویں اجلاس کے دوسرے روز کاسیشن سپیکر ملک محمد مسکین کی صدارت میں شروع ہوا تو ڈاکٹر مظفر ریلے نے ایک قرارداد پیش کی جس میں کہاگیا کہ قانون ساز اسمبلی کایہ اجلاس 26دسمبرکے دلخراش اورافسوسناک واقعے جس میں ڈائریکٹر زراعت سمیت5 بے گناہ افراد شہید ہوئے پرافسوس کااظہار کرتا ہے اور اس واقعے کو دہشتگردی قرار دیتے ہوئے مطالبہ کرتاہے کہ دہشت گردوں کو قرار واقعی سزادی جائے اس قرار داد پربحث میں حصہ لیتے ہوئے علی مراد ایڈووکیٹ نے کہا کہ گلگت میں کئی سالوں سے جتنے بھی دہشت گردی کے واقعات ہوئے ہیں ان میں سے کسی بھی واقعہ کے ملزم بے نقاب نہیں ہوئے ہیں انہوں نے کہاکہ گلگت میں ہر شخص کے پاس اسلحہ ہے اور اس اسلحہ سے ایک دوسرے کو قتل کرتے ہیں ملک میں کوئی وزیر اعظم بنتا ہے یاصدر منتخب ہوتاہے تو پورا شہر فائرنگ سے گونج اٹھتا ہے اور حکومتی ادارے خاموش تماشائی بن جاتے ہیں گلگت شہر میں امن کیلئے ضروری ہے کہ شہر کو اسلحہ سے پاک کیاجائے سلطان مدد نے بحث میں حصہ لیتے ہوئے کہا کہ ہم نے بہت سی قرار دادیں منظور کی ہیں مگر اب تک کی ایک قرار داد پربھی عمل نہیں ہواہے انہوں نے کہا کہ1988 سے اب تک سینکڑوں بے گناہ افراد قتل ہوئے مگر ایک ملزم کو بھی سزا نہیں ملی ہے انہوں نے کہا کہ یہاں پر موجود تمام سرکاری ملازمین اپنے اپنے مسلکوں کیلئے کام کرتے ہیں کوئی بھی شخص یا ادارہ ذمہ داری سے امن کیلئے کام نہیں کرتا ہے یہاں پر بند کمروں میں امن کانفرنسز اور سیمینار ہوتے ہیں وہاں پر خوبصورت تقاریر ہوتی ہیں اور ان کیلئے کام کرنے کاعہد کیاجاتا ہے مگر یہی مقررین ہال سے باہرنکل کر اپنے اپنے مسلکوں کیلئے کام کرتے ہیں انہوں نے کہاکہ جب تک شہر کو اسلحہ سے پاک نہیں کیا جاتا تب تک امن کاقیام ممکن نہیں ہے وزیر ولایت علی نے کہاکہ ہم سب مسلمان ہیں اور اسلام ایک مکمل ضابطہ حیات کانام ہے کسی بے گناہ کو سرعام قتل کرنا قابل مذمت اقدام ہے آفتاب حیدر ایڈووکیٹ نے کہاکہ ڈائریکٹر زراعت کے قتل کے واقعے کی ہم سب مذمت کرتے ہیں اور مطالبہ کرتے ہیں کہ اصل ملزموں کوگرفتار کیا جائے مشیرخوراک واطلاعات کیپٹن ( ر ) سکندر علی نے بحث میں حصہ لیتے ہوئے کہاکہ 26دسمبر کو پیش آنے والے دہشت گردی کے واقعے پر ہم سب کو افسوس ہے انہوں نے کہا کہ گلگت شہر میں ہمیشہ ایک غیر یقینی صورت حال ہوتی ہے کچھ عرصہ سکون ہوتا ہے پھر اچانک بدامنی شروع ہوجاتی ہے جس کی وجہ سے ہم سب بے سکون ہوگئے ہیں انہوں نے کہاکہ ہم یہاں کے عوام بالخصوص عبد الواحد کے لواحقین کے انتہائی شکر گزار ہیں کہ انہوں نے انتہائی صبر وتحمل کامظاہرہ کرکے گلگت کے امن کوخراب کرنے کی سازش کوناکام بنادیا ہے انہوں نے کہاکہ شہر میں جب بھی کوئی دہشتگردی کاواقع رونما ہوتاہے تو ہم سوچے اورسمجھے بغیر فوراً انتقام کی طرف جاتے ہیں حالانکہ یہ بات روز روشن کی طرف عیاں ہے کہ فرقہ واریت کی آڑ میں بعض لوگوں نے اپنی ذاتی اور خاندانی دشمنیاں بھی برابر کی ہیں اور یہ بات ریکارڈ پر موجود ہے انہوں نے کہا کہ گلگت چھوٹا سا شہر ہے اگر ہم سب عوام اور انتظامیہ ذمہ داری اورہوش مندی کامظاہرہ کریں تو کوئی مجرم بچ کرنہیں جاسکتا ہے حمایت اللہ خان نے بحث میں حصہ لیتے ہوئے کہاکہ چند ماہ قبل میرے اوپر قاتلانہ حملہ ہوا ملزم ابھی تک گرفتار نہیں ہوئے نادر امان پر حملہ ہوا ملزم گرفتار نہیں ہوئے جس کی وجہ سے دہشت گردوں کے حوصلے بلند ہوئے ہیں اور انہوں نے ڈائریکٹر زراعت عبد الواحد اورخواتین اور معصوم بچوں کونشانہ بنایا ہے انہوں نے کہاکہ حکومت اور انتظامیہ ہمیں تحفظ دینے میں ناکام ہوچکی ہے اس لئے انتظامیہ ہمیں تحفظ دینے کیلئے اقدامات کریں انہوں نے کہاکہ شہر میں دیر پا اور مستقل امن تب قائم ہوگا جب مجرموں اور قاتلوں کو سزا ملے گی جب ملزم گرفتار ہی نہ ہوں اور ملزموں کو سزا ہی نہ ملے توامن کیسے قائم ہوگا اس لئے حکومت اس سازش کوبے نقاب کرے اورڈائریکٹر زراعت عبد الواحد کے قاتلوں کو بے نقاب کرکے گرفتار کرے حافظ حفیظ الرحمن نے کہا کہ ڈائریکٹر زراعت عبد الواحد اس علاقے کے سپوت تھے انہوں نے علاقے میں زراعت کی ترقی کیلئے گراں قدرخدمات انجام دی تھیں اور محرم سے چندد ن قبل دہشتگردی کایہ واقعہ ایک بڑی سازش تھی دہشت گردوں نے بربریت کامظاہرہ کیا مگر یہاں کے عوام نے ذمہ داری اورہوش مندی کامظاہرہ کرکے اس سازش کو ناکام بنایا مگر اب انتظامیہ کی ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ اس سازش کو بے نقاب کرکے ملزموں کوکیفرکردار تک پہنچائے حیدر خان نے کہاکہ غیر جانب دار افراد کاقتل کرنے والے آلہ کار ہوتے ہیں پس پردہ ہاتھ کوبے نقاب کرنا ضروری ہے بعد ازاں قرارداد میں ترمیم کرکے متفقہ طورپراسے منظور کیا گیا قرارداد میں سیکرٹری ہیلتھ پر فائرنگ کے ملزموں کو بھی گرفتار کرکے سزا دینے کامطالبہ کیاگیا اس موقع پر اپنے ریمارکس میں سپیکر قانون ساز اسمبلی ملک محمد مسکین نے کہاکہ اسمبلی کے ممبر یاسپیکر کے پاس یہ اختیار نہیں ہے کہ وہ ملزموں کو گرفتار کریں البتہ ہم ایسے واقعات کی مذمت کرتے ہیں انہوں نے کہاکہ 26دسمبر کے اندوہناک واقعے کے فوراً بعد نہ صرف عوامنے مذمت کی بلکہ تمام مکاتب فکر کے دانشوروں ، امن پسندوں اور ہرطبقہ فکر کے لوگوں نے اس واقعے کی مذمت کی جو ایک مثبت پیش رفت ہے

Leave a Comment »

ابھی تک کوئی تبصرہ نہیں.

RSS feed for comments on this post. TrackBack URI

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s

Create a free website or blog at WordPress.com.

%d bloggers like this: