|Gilgit Urdu News|myGilgit.com|

جولائی 10, 2009

سپریم اپیلٹ کورٹ نے صادق علی کی قبر کشائی کاحکم دے دیا

Filed under: Gilgit News — mygilgit @ 5:56 شام

گلگت ( کے ٹو ) سپریم اپیلٹ کورٹ شمالی علاقہ جات نے جعفر آباد نگر سے تعلق رکھنے والے 24سالہ نوجوان صادق علی کی گلگت پولیس کی حراست میں موت کو غیرطبعی موت اور ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال گلگت کے ڈاکٹروں کی طرف سے پیش کی گئی صادق علی کی پوسٹ مارٹم رپورٹ کوغیر تسلی بخش اورمبہم قرار دیتے ہوئے حکم دیاہے کہ صادق علی کی قبر کشائی کرکے پمز ہسپتال اسلام آباد کے ماہرڈاکٹروں کے ذریعے اس کی لاش کادوبارہ پوسٹ مارٹم کروایاجائے ، عدالت عظمیٰ شمالی علاقہ جات نے صادق علی کی موت کے ذمہ داروں کے خلاف ایف آئی آردرج کرنے کاحکم بھی دیاہے ، بدھ کے روز سپریم اپیلٹ کورٹ شمالی علاقہ جات کے چیف جسٹس محمد نواز عباسی کی سربراہی میں جسٹس سید جعفر شاہ اورجسٹس محمد یعقوب پرمشتمل بنچ نے اس واقعہ کے ازخود نوٹس کی کارروائی کو نمٹاتے ہوئے اپنے حکم نامے میں کہا ہے کہ صادق علی کی پوسٹ مارٹم رپورٹ سے پتہ چلتا ہے کہ ا س کی موت پولیس تشدد کی وجہ سے ہوئی ہے ۔ عدالت عظمیٰ نے کہاہے کہ مرحوم صادق علی کی موت سے متعلق ایس پی گلگت نے جو میڈیکل رپورٹ عدالت میں پیش کی ہے اس میں اس بات کا ذکر نہیں ہے کہ مرحوم کے گردے کی بیماری اورہیپاٹائٹس کامرض کس مرحلے میں تھا کیونکہ عام حالات میں ایسی بیماری موت کاسبب نہیں بنتی ۔ عدالت عظمیٰ نے کہاہے کہ اگرزیر حراست صادق علی بیمار تھا تو تفتیشی ٹیم مریض کو طبعی سہولت بم پہنچاتی ۔عدالت نے کہا کہ اگرچہ پولیس نے انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت سے مرحوم صادق علی کاجسمانی ریمانڈ لینے کے بعد مرحوم کوتفتیش کیلئے حساس اداروں کے حوالے کردیا اس کے باوجود بہت ہی باریک بینی سے میڈیکل رپورٹ کو ملاحظہ کرنے کے بعد تجویز کیاگیاہے کہ مرحوم صادق علی کی موت طبعی نہیں ہے اگر مرحوم کی موت تشدد کی وجہ سے ہوئی تو ہرایک کو بنیادی حق حاصل ہے کہ وہ اپنے بنیادی حق کیلئے قانون کی مدد لے اپنے حکم میں عدالت عظمیٰ ( سپر یم اپیلٹ کورٹ ) نے ایس پی گلگت کو حکم دیاہے کہ صادق علی جو کہ پولیس حراست میں تھاکی موت غیر طبعی ہوئی ہے لہٰذا اس کی غیر طبعی موت کے ذمہ داروں کے خلاف ایف آئی آر درج کرکے عدالت عظمیٰ میں پیش کی جائے ۔عدالت عظمیٰ نے اپنے حکم میں مزید کہاہے کہ سیکرٹری داخلہ گلگت بلتستان کی ہدایت پر صادق علی کاجن ڈاکٹروں نے پوسٹ مارٹم کیا ہے وہ تسلی بخش نہیں ہے اس حوالے سے عدالت عظمیٰ نے حکم دیاہے کہ پمز اسلام آباد سے ماہر ڈاکٹروں کی ٹیم کی نگرانی میں مرحوم صادق علی کادربارہ پوسٹ مارٹم کرایا جائے ، عدالت عظمیٰ نے کہاہے کہ سیشن جج گلگت مرحوم صادق علی کے دوبارہ پوسٹ مارٹم کیلئے قبرکشائی کیلئے مجسٹریٹ کی ڈیوٹی لگائیں اوردس روز کے اندر پوسٹ مارٹم کی رپورٹ ڈائریکٹر پمز اسلام آباد کے ذریعے عدالت میں پیش کی جائے

Leave a Comment »

ابھی تک کوئی تبصرہ نہیں.

RSS feed for comments on this post. TrackBack URI

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s

Create a free website or blog at WordPress.com.

%d bloggers like this: