|Gilgit Urdu News|myGilgit.com|

ستمبر 14, 2009

قراقرم یونیورسٹی انتطامیہ کی غفلت، بلتستان کے سینکڑوں طلبہ مارک شیٹ کے منتظر

Filed under: Gilgit News — mygilgit @ 1:49 شام

سکردو(کے ٹو) قراقرم انٹرنےشنل ےونےورسٹی گلگت انتظامےہ کی غلط پالےسےوں اور غفلت کی وجہ سے اکثر طالب علموں کو مےڑک اور انٹر کا مارک شےٹ نہےں ملاہے جس کی وجہ سے طالب علموں کے قےمتی سال ضائع ہو رہے ہےں دوسری جانب سپلمنٹری امتحان بالکل قرےب ہے لےکن ےونےورسٹی کی جانب سے بروقت مارک شےٹ اےشو نہ کرنے کی وجہ سے طالب علم سپلمنڑی امتحانات مےں فارم جمع کرنے سے قاصر ہے۔ طالب علموں کی جانب سے وائس چانسلر قراقرم انٹرنےشنل ےونےورسٹی اور انچارج شعبہ امتحانات سے مطالبہ کےا ہے کہ وہ طالب علموں کی اس مسائل کے فوری حل کےلے اقدامات کرےں ورنہ طالب علم قانونی چارہ جوئی کرنے پرمجبور ہونگے۔ اس وقت بلتستان رےجن کے طالب علم جو کہ قراقرم انٹرنےشنل ےونےورسٹی سے منسلک ہے ان طالب علموں کو سخت مشکلات کا سامنا ہے ےونےورسٹی کی جانب سے ان طالب علموں کو کوئی سہولےات اور مراعات نہےں کہ ےونےورسٹی ان طالب علموں کو بروقت مارک شےٹ دے سکتا ہے نہ کوئی انفارمےشن بروقت ملتاہے جس کی وجہ سے اکثر طالب علموں کے قےمتی سال ضائع ہو رہے ہےں اگر ےونےورسٹی کی جانب سے کوئی اضافی فےس، نقل کےس ےا دےگر مارک شےٹ لےٹ ہونے کی صورت مےں بچوں کی سال ضائع ہو جائے گی۔ےونےورسٹی کے اعلیٰ حکام کو کوئی ٹس سے مس نہےں اگر طالب علموں سے کوئی معمولی غلطی ہو جائے تو ےونےورسٹی کے ذمہ دار طالب علموں کے رزلٹ روک لئے جاتے ہےں۔ اور طالب علموں کو بلاوجہ تنگ کےا جاتا ہے۔ اس لےے بلتستان رےجن کے طالب علموں کی جانب سے وائس چانسلر قراقرم انٹرنےشنل ےونےورسٹی گلگت بلتستان سے مطالبہ کےا ہے کہ وہ بلتستان رےجن کے اندر موجود سب آفس کو فل مراعات اور سہولےات فراہم کےا جائے ۔اس سب آفس مےں آفےسروں اور سٹا ف کی تعداد مےں اضافہ کےا جائے۔اور جن جن طالب علموں کو ابھی تک مارک شےٹ اور سرٹےفےکٹ اےشو نہےں ہوا ہے ان کو فوری طور پر سپلمنٹری امتحان سے قبل مارک شےٹ اےشو کےا جائے۔ اور جن جن طالب علموں کے اوپر بغےر الزام نقل کےس بنا کر ان کے مارک شےٹ روک کر ان طالب علموں کے سال بلاوجہ ضائع کر رہا ہے ان طالب علموں کے حوالے سے دوبارہ کمےٹی بناےا جائے تاکہ علاقے کے عوام کے ساتھ ساتھ طالب علموں کو بھی فائدہ ہو سکے

1 تبصرہ »

  1. The university administration is not carrying for the future of students.They have willingly halted the marks sheet and it has been learned that the lower staff of university are openly demanding money from students to deliver the marks sheet other wise they will spoil the future of students. It is requested from
    the university administration to think and resolve the problem.

    تبصرہ از allinpole — ستمبر 15, 2009 @ 10:56 صبح | جواب دیں


RSS feed for comments on this post. TrackBack URI

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s

Create a free website or blog at WordPress.com.

%d bloggers like this: